آنے والا ہے کوئی مہمان کیا

عادل حیات

آنے والا ہے کوئی مہمان کیا

عادل حیات

MORE BYعادل حیات

    آنے والا ہے کوئی مہمان کیا

    ہو گئے سب مرحلے آسان کیا

    وقت کی رفتار کیسے تھم گئی

    ہو گیا ہے ہر نفس بے جان کیا

    ٹوٹنا جڑنا تو ہے اک سلسلہ

    ہو رہے ہو اس قدر حیران کیا

    زندگی سے رشتہ اپنا توڑ کر

    جا رہے ہو جب تو یہ سامان کیا

    دھوپ کے سائے میں چپ سادھے ہوئے

    کر رہے ہو امن کا اعلان کیا

    خواہشوں کے سب پرندے اڑ گئے

    ہو گئی ہے زندگی ویران کیا

    سوچتا رہتا ہوں عادلؔ رات دن

    میں ہی کیا ہوں اور مری پہچان کیا

    مآخذ
    • کتاب : Sitara Sang (Gazals) (Pg. 84)
    • Author : Adil Hayat
    • مطبع : Nirali Duniya Publications,Darya Ganj, Delhi (2004)
    • اشاعت : 2004

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY