آتے آتے مرا نام سا رہ گیا

وسیم بریلوی

آتے آتے مرا نام سا رہ گیا

وسیم بریلوی

MORE BY وسیم بریلوی

    آتے آتے مرا نام سا رہ گیا

    اس کے ہونٹوں پہ کچھ کانپتا رہ گیا

    رات مجرم تھی دامن بچا لے گئی

    دن گواہوں کی صف میں کھڑا رہ گیا

    وہ مرے سامنے ہی گیا اور میں

    راستے کی طرح دیکھتا رہ گیا

    جھوٹ والے کہیں سے کہیں بڑھ گئے

    اور میں تھا کہ سچ بولتا رہ گیا

    آندھیوں کے ارادے تو اچھے نہ تھے

    یہ دیا کیسے جلتا ہوا رہ گیا

    اس کو کاندھوں پہ لے جا رہے ہیں وسیمؔ

    اور وہ جینے کا حق مانگتا رہ گیا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جگجیت سنگھ

    جگجیت سنگھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY