ابھی مکاں میں ابھی سوئے لامکاں ہوں میں

فرید جاوید

ابھی مکاں میں ابھی سوئے لامکاں ہوں میں

فرید جاوید

MORE BY فرید جاوید

    ابھی مکاں میں ابھی سوئے لامکاں ہوں میں

    ترے خیال تری دھن میں ہوں جہاں ہوں میں

    کلی کلی متبسم ہے آرزوؤں کی

    قدم قدم پہ محبت میں کامراں ہوں میں

    نوا نوا میں مری زندگی مچلتی ہے

    رباب حسن و محبت پہ نغمہ خواں ہوں میں

    مرا تجسس پیہم ہے زندگی آموز

    مجھے قرار نہیں ہے رواں دواں ہوں میں

    جہاں تمام اگر مجھ سے سرگراں ہے تو کیا

    بذات خود بھی تو اک مستقل جہاں ہوں میں

    فنا کی زد سے ہے محفوظ زندگی میری

    شعار اپنا محبت ہے جاوداں ہوں میں

    یہ اعتبار گل و گلستاں مجھی سے ہے

    یہ اور بات کہ پروردۂ خزاں ہوں میں

    یہ کون دیکھ رہا ہے مجھے حقارت سے

    غبار راہ نہیں میر کارواں ہوں میں

    0
    COMMENT
    COMMENTS
    تبصرے دیکھیے

    Critique mode ON

    Tap on any word to submit a critique about that line. Word-meanings will not be available while you’re in this mode.

    OKAY

    SUBMIT CRITIQUE

    نام

    ای-میل

    تبصره

    Thanks, for your feedback

    Critique draft saved

    EDIT DISCARD

    CRITIQUE MODE ON

    TURN OFF

    Discard saved critique?

    CANCEL DISCARD

    CRITIQUE MODE ON - Click on a line of text to critique

    TURN OFF

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed form your favorites