اچھے خاصے لوگ برے ہو جاتے ہیں

خالد عبادی

اچھے خاصے لوگ برے ہو جاتے ہیں

خالد عبادی

MORE BYخالد عبادی

    اچھے خاصے لوگ برے ہو جاتے ہیں

    جاگنے کا دعویٰ کر کے سو جاتے ہیں

    شہر کا بھی دستور وہی جنگل والا

    کھوجنے والے ہی اکثر کھو جاتے ہیں

    دیوانوں کی گھات میں بیٹھنے والے لوگ

    سنتے ہیں اک دن پاگل ہو جاتے ہیں

    اس کی گلی میں جا کر اس سے الجھیں گے

    ساتھ اگر ہونا ہے ہو لو جاتے ہیں

    ہم جیسوں کو حیرت بھی ہوتی ہوگی

    ایک ادھر آتا ہے ادھر دو جاتے ہیں

    ہمت ہار گئے تو بازی ہار گئے

    لوٹ جا تو بھی ہم بھی گھر کو جاتے ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : khush ahjaar (Pg. 37)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY