عجیب طور کی ہے اب کے سرگرانی مری

عباس تابش

عجیب طور کی ہے اب کے سرگرانی مری

عباس تابش

MORE BYعباس تابش

    عجیب طور کی ہے اب کے سرگرانی مری

    میں تجھ کو یاد بھی کر لوں تو مہربانی مری

    میں اپنے آپ میں گہرا اتر گیا شاید

    مرے سفر سے الگ ہو گئی روانی مری

    بس ایک موڑ مری زندگی میں آیا تھا

    پھر اس کے بعد الجھتی گئی کہانی مری

    تباہ ہو کے بھی رہتا ہے دل کو دھڑکا سا

    کہ رائیگاں نہ چلی جائے رائیگانی مری

    میں اپنے بعد بہت یاد آیا کرتا ہوں

    تم اپنے پاس نہ رکھنا کوئی نشانی مری

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY