اپنا غم لے کے کہیں اور نہ جایا جائے

ندا فاضلی

اپنا غم لے کے کہیں اور نہ جایا جائے

ندا فاضلی

MORE BY ندا فاضلی

    اپنا غم لے کے کہیں اور نہ جایا جائے

    گھر میں بکھری ہوئی چیزوں کو سجایا جائے

    جن چراغوں کو ہواؤں کا کوئی خوف نہیں

    ان چراغوں کو ہواؤں سے بچایا جائے

    خود کشی کرنے کی ہمت نہیں ہوتی سب میں

    اور کچھ دن ابھی اوروں کو ستایا جائے

    باغ میں جانے کے آداب ہوا کرتے ہیں

    کسی تتلی کو نہ پھولوں سے اڑایا جائے

    کیا ہوا شہر کو کچھ بھی تو دکھائی دے کہیں

    یوں کیا جائے کبھی خود کو رلایا جائے

    گھر سے مسجد ہے بہت دور چلو یوں کر لیں

    کسی روتے ہوئے بچے کو ہنسایا جائے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY