اشک جب دیدۂ تر سے نکلا

اختر امام رضوی

اشک جب دیدۂ تر سے نکلا

اختر امام رضوی

MORE BYاختر امام رضوی

    اشک جب دیدۂ تر سے نکلا

    ایک کانٹا سا جگر سے نکلا

    پھر نہ میں رات گئے تک لوٹا

    ڈوبتی شام جو گھر سے نکلا

    ایک میت کی طرح لگتا تھا

    چاند جب قید سحر سے نکلا

    مجھ کو منزل بھی نہ پہچان سکی

    میں کہ جب گرد سفر سے نکلا

    ہائے دنیا نے اسے اشک کہا

    خون جو زخم نظر سے نکلا

    اک اماوس کا نصیبہ ہوں میں

    آج یہ چاند کدھر سے نکلا

    جب اڑا جانب منزل اخترؔ

    ایک شعلہ مرے پر سے نکلا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY