اور کیا میرے لیے عرصۂ محشر ہوگا

احمد ظفر

اور کیا میرے لیے عرصۂ محشر ہوگا

احمد ظفر

MORE BY احمد ظفر

    اور کیا میرے لیے عرصۂ محشر ہوگا

    میں شجر ہوں گا ترے ہاتھ میں پتھر ہوگا

    یوں بھی گزریں گی ترے ہجر میں راتیں میری

    چاند بھی جیسے مرے سینے میں خنجر ہوگا

    زندگی کیا ہے کئی بار یہ سوچا میں نے

    خواب سے پہلے کسی خواب کا منظر ہوگا

    ہاتھ پھیلائے ہوئے شام جہاں آئے گی

    بند ہوتا ہوا دروازۂ خاور ہوگا

    میں کسی پاس کے صحرا میں بکھر جاؤں گا

    تو کسی دور کے ساحل کا سمندر ہوگا

    وہ مرا شہر نہیں شہر خموشاں کی طرح

    جس میں ہر شخص کا مرنا ہی مقدر ہوگا

    کون ڈوبے گا کسے پار اترنا ہے ظفرؔ

    فیصلہ وقت کے دریا میں اتر کر ہوگا

    مآخذ:

    • Book : Nuquush (Pg. 534)
    • Author : Mohammad Tufail
    • مطبع : Idara-e-Frog-e-Urdu, Lahore (1985,Issue No. 132)
    • اشاعت : 1985,Issue No. 132

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY