بات کچھ ہم سے بن نہ آئی آج

الطاف حسین حالی

بات کچھ ہم سے بن نہ آئی آج

الطاف حسین حالی

MORE BY الطاف حسین حالی

    بات کچھ ہم سے بن نہ آئی آج

    بول کر ہم نے منہ کی کھائی آج

    چپ پر اپنی بھرم تھے کیا کیا کچھ

    بات بگڑی بنی بنائی آج

    شکوہ کرنے کی خو نہ تھی اپنی

    پر طبیعت ہی کچھ بھر آئی آج

    بزم ساقی نے دی الٹ ساری

    خوب بھر بھر کے خم لنڈھائی آج

    معصیت پر ہے دیر سے یا رب

    نفس اور شرع میں لڑائی آج

    غالب آتا ہے نفس دوں یا شرع

    دیکھنی ہے تری خدائی آج

    چور ہے دل میں کچھ نہ کچھ یارو

    نیند پھر رات بھر نہ آئی آج

    زد سے الفت کی بچ کے چلنا تھا

    مفت حالیؔ نے چوٹ کھائی آج

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY