aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

بہت دنوں میں ہم ان سے جو ہم کلام ہوئے

وارث کرمانی

بہت دنوں میں ہم ان سے جو ہم کلام ہوئے

وارث کرمانی

MORE BYوارث کرمانی

    بہت دنوں میں ہم ان سے جو ہم کلام ہوئے

    دل و نظر ہمہ تن سجدہ و سلام ہوئے

    ہنوز جیسے مسیحا کی آمد آمد ہے

    اگرچہ عمر ہوئی زندگی تمام ہوئے

    شفق سی خیمۂ جاناں کی سمت باقی ہے

    تمام وادی و کہسار غرق شام ہوئے

    کئی گلے تھے جو شور جہاں میں ڈوب گئے

    کئی ستم تھے جو احسان بن کے عام ہوئے

    کسی طرف جنہیں راہ گناہ مل نہ سکی

    کچھ ایسے لوگ بھی دنیا میں نیک نام ہوئے

    افق کے پار کہیں سے لہو اچھلتا ہے

    زمیں سے دور بھی کیا کیا نہ قتل عام ہوئے

    چلے تھے ان سے مصیبت میں ہم گلہ کرنے

    کچھ اور مورد تضحیک خاص و عام ہوئے

    رہ طلب میں نئے ریگزار تک پہنچے

    وہ تشنہ کام جو صحرا میں تیز گام ہوئے

    مأخذ:

    Funoon(Jadeed Ghazal Number: Volume-002) (Pg. 503)

      • اشاعت: 1969
      • ناشر: احمد ندیم قاسمی
      • سن اشاعت: 1969

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے