کیوں اجڑ جاتی ہے دل کی محفل (ردیف .. ے)

سیف الدین سیف

کیوں اجڑ جاتی ہے دل کی محفل (ردیف .. ے)

سیف الدین سیف

MORE BYسیف الدین سیف

    کیوں اجڑ جاتی ہے دل کی محفل

    یہ دیا کون بجھا دیتا ہے

    وہ نہیں دیکھتے ساحل کی طرف

    جن کو طوفان صدا دیتا ہے

    شور دن کو نہیں سونے دیتا

    شب کو سناٹا جگا دیتا ہے

    تم تو کہتے تھے کہ رت کا جادو

    دشت میں پھول کھلا دیتا ہے

    اس کی مرضی ہے وہ ہر راحت میں

    رنج تھوڑا سا ملا دیتا ہے

    دکھ تو دیتا ہے ترا غم لیکن

    دل کو اکسیر بنا دیتا ہے

    تجھ سے پہلے دل بے تاب مجھے

    تیری آمد کا پتا دیتا ہے

    جان من ایک حسیں چہرہ بھی

    ساری محفل کو سجا دیتا ہے

    اب تسلی بھی اذیت ہے مجھے

    اب دلاسا بھی رلا دیتا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : intekhab-e-zarrin (Pg. 312)
    • Author : Khvaja Mohammad Zakariya
    • مطبع : Sangeet publication (2009)
    • اشاعت : 2009

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY