وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

مومن خاں مومن

وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

مومن خاں مومن

MORE BY مومن خاں مومن

    وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    وہی یعنی وعدہ نباہ کا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    the love that 'tween us used to be, you may, may not recall

    those promises of constancy, you may, may not recall

    وہ جو لطف مجھ پہ تھے بیشتر وہ کرم کہ تھا مرے حال پر

    مجھے سب ہے یاد ذرا ذرا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    those favours that you did bestow, the kindness that you once did show

    I can recall them all somehow, you may, may not recall

    وہ نئے گلے وہ شکایتیں وہ مزے مزے کی حکایتیں

    وہ ہر ایک بات پہ روٹھنا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    new complaints each every night, stories so full of delight

    at every word your feigning slight, you may, may not recall

    کبھی بیٹھے سب میں جو روبرو تو اشارتوں ہی سے گفتگو

    وہ بیان شوق کا برملا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    sitting in midst of company, talking in gestures openly

    that expression of love publicly, you may, may not recall

    ہوئے اتفاق سے گر بہم تو وفا جتانے کو دم بہ دم

    گلۂ ملامت اقربا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    if face to face we chanced to be, to constantly prove loyalty

    those plaints of folks' rebukes to me, you may, may not recall

    کوئی بات ایسی اگر ہوئی کہ تمہارے جی کو بری لگی

    تو بیاں سے پہلے ہی بھولنا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    a word of mine if were to be, which hurt you to any degree

    forgetting it most instantly, you may, may not recall

    کبھی ہم میں تم میں بھی چاہ تھی کبھی ہم سے تم سے بھی راہ تھی

    کبھی ہم بھی تم بھی تھے آشنا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    friendship twixt us once used to be, a path there was from you to me

    once "I" and "you" were not, but we, you may, may not recall

    سنو ذکر ہے کئی سال کا کہ کیا اک آپ نے وعدہ تھا

    سو نباہنے کا تو ذکر کیا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    Long past though it appears to be,there was something you promised me

    to fulfil each vow truthfully, you may, may not recall

    کہا میں نے بات وہ کوٹھے کی مرے دل سے صاف اتر گئی

    تو کہا کہ جانے مری بلا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    ---

    ---

    وہ بگڑنا وصل کی رات کا وہ نہ ماننا کسی بات کا

    وہ نہیں نہیں کی ہر آن ادا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    you getting angry when we met, at everything getting upset

    your nay saying I can't forget, you may, may not recall

    جسے آپ گنتے تھے آشنا جسے آپ کہتے تھے با وفا

    میں وہی ہوں مومنؔ مبتلا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو

    the one you once held close to you, the one whom once you deemed as true

    I am that distressed Momin, blue, you may, may not recall

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    فیروزہ بیگم

    فیروزہ بیگم

    بھارتی وشواناتھن

    بھارتی وشواناتھن

    شانتی ہیرانند

    شانتی ہیرانند

    فریدہ خانم

    فریدہ خانم

    بیگم اختر

    بیگم اختر

    شانتی ہیرانند

    شانتی ہیرانند

    عابدہ پروین

    عابدہ پروین

    شانتی ہیرانند

    شانتی ہیرانند

    ہری ہرن

    ہری ہرن

    شانتی ہیرانند

    شانتی ہیرانند

    RECITATIONS

    نیرہ نور

    نیرہ نور

    فہد حسین

    فہد حسین

    شمس الرحمن فاروقی

    شمس الرحمن فاروقی

    نیرہ نور

    وہ جو ہم میں تم میں قرار تھا تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو نیرہ نور

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites