زندگی کاوش باطل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

مظہر امام

زندگی کاوش باطل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

مظہر امام

MORE BY مظہر امام

    زندگی کاوش باطل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    تو ہی اک عمر کا حاصل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    لوگ ملتے ہیں سر راہ گزر جاتے ہیں

    تو ہی اک ہم سفر دل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    تو نے سوچا ہے مجھے تو نے سنوارا ہے مجھے

    تو مرا ذہن مرا دل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    تو نہ ہوگا تو کہاں جا کے جلوں گا شب بھر

    تجھ سے ہی گرمئ محفل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    میں کہ بپھرے ہوئے طوفاں میں ہوں لہروں لہروں

    تو کہ آسودۂ ساحل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    اس رفاقت کو سپر اپنی بنا لیں جی لیں

    شہر کا شہر ہی قاتل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    ایک میں نے ہی اگائے نہیں خوابوں کے گلاب

    تو بھی اس جرم میں شامل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    اب کسی راہ پہ جلتے نہیں چاہت کے چراغ

    تو مری آخری منزل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    زندگی کاوش باطل ہے مرا ساتھ نہ چھوڑ نعمان شوق

    مآخذ:

    • Book: paalkii kahkashaa.n (Pg. 74)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites