بلا سے کوئی کہے دن کو رات چپ رہنا

خورشید طلب

بلا سے کوئی کہے دن کو رات چپ رہنا

خورشید طلب

MORE BY خورشید طلب

    بلا سے کوئی کہے دن کو رات چپ رہنا

    تم اپنے ہونٹوں پہ رکھ لینا ہات چپ رہنا

    کہیں پہ کچھ بھی نظر آئے پوچھنا مت کچھ

    کبھی نکلنا اگر میرے ساتھ چپ رہنا

    خدا نے بخشا ہے کیا ظرف موم بتی کو

    پگھلتے رہنا مگر ساری رات چپ رہنا

    تمہارے سر پہ بگولے بھی آ کے چیخیں گے

    مگر بھلانا نہیں میری بات چپ رہنا

    تمہاری چیخ تمہیں بے پناہ کر دے گی

    شکاری کب سے لگائے ہے گھات چپ رہنا

    زبان تالو میں پیوست کر کے رکھنا طلبؔ

    کوئی مذاق ہے کیا تا حیات چپ رہنا

    مآخذ:

    • کتاب : Ghazal Ke Rang (Pg. 145)
    • Author : Akram Naqqash, Sohil Akhtar
    • مطبع : Aflaak Publications, Gulbarga (2014)
    • اشاعت : 2014

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY