بھلاتا لاکھ ہوں لیکن برابر یاد آتے ہیں

حسرتؔ موہانی

بھلاتا لاکھ ہوں لیکن برابر یاد آتے ہیں

حسرتؔ موہانی

MORE BY حسرتؔ موہانی

    بھلاتا لاکھ ہوں لیکن برابر یاد آتے ہیں

    الٰہی ترک الفت پر وہ کیونکر یاد آتے ہیں

    نہ چھیڑ اے ہم نشیں کیفیت صہبا کے افسانے

    شراب بے خودی کے مجھ کو ساغر یاد آتے ہیں

    رہا کرتے ہیں قید ہوش میں اے وائے ناکامی

    وہ دشت خود فراموشی کے چکر یاد آتے ہیں

    نہیں آتی تو یاد ان کی مہینوں تک نہیں آتی

    مگر جب یاد آتے ہیں تو اکثر یاد آتے ہیں

    حقیقت کھل گئی حسرتؔ ترے ترک محبت کی

    تجھے تو اب وہ پہلے سے بھی بڑھ کر یاد آتے ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نسیم بیگم

    نسیم بیگم

    نامعلوم

    نامعلوم

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    بھلاتا لاکھ ہوں لیکن برابر یاد آتے ہیں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY