درد بڑھ کر دوا نہ ہو جائے

علیم اختر

درد بڑھ کر دوا نہ ہو جائے

علیم اختر

MORE BYعلیم اختر

    درد بڑھ کر دوا نہ ہو جائے

    زندگی بے مزا نہ ہو جائے

    ان تلون مزاجیوں کا شکار

    کوئی میرے سوا نہ ہو جائے

    لذت انتظار ہی نہ رہے

    کہیں وعدہ وفا نہ ہو جائے

    تیری رفتار اے معاذ اللہ

    حشر کوئی بپا نہ ہو جائے

    کامیابی ہی کامیابی ہو

    تو یہ بندہ خدا نہ ہو جائے

    میری بیتابیوں سے گھبرا کر

    کوئی مجھ سے خفا نہ ہو جائے

    کچھ تو اندازۂ جفا کیجئے

    دل ستم آشنا نہ ہو جائے

    کہیں ناکامئ اثر آخر

    مدعائے دعا نہ ہو جائے

    وہ نگاہیں نہ پھیر لیں اخترؔ

    عشق بے آسرا نہ ہو جائے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    درد بڑھ کر دوا نہ ہو جائے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY