دست ہنر جھٹکتے ہی ضائع ہنر گیا

قاسم یعقوب

دست ہنر جھٹکتے ہی ضائع ہنر گیا

قاسم یعقوب

MORE BY قاسم یعقوب

    دست ہنر جھٹکتے ہی ضائع ہنر گیا

    چارہ گری نہیں رہی جب چارہ گر گیا

    ہستی سے مل گیا مجھے کچھ نیستی کا فہم

    صحرا وہاں ملا جہاں دریا اتر گیا

    کیا ہو سکے حساب کہ جب آگہی کہے

    اب تک تو رائیگانی میں سارا سفر گیا

    وہ ایک جذبہ جس نے جمال آشنا کیا

    منظر ہٹا تو جسم کے اندر ہی مر گیا

    شاید سر حیات مجھے آ ملے کبھی

    اک شخص میرے جیسا نہ جانے کدھر گیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY