دیکھیے چلتا ہے پیمانہ کدھر سے پہلے

اظہر لکھنوی

دیکھیے چلتا ہے پیمانہ کدھر سے پہلے

اظہر لکھنوی

MORE BYاظہر لکھنوی

    دیکھیے چلتا ہے پیمانہ کدھر سے پہلے

    بزم میں شور ہے ہر سمت ادھر سے پہلے

    غم کی تاریک گھٹاؤں سے پریشان نہ ہو

    تیرگی ہوتی ہے آثار سحر سے پہلے

    آپ جس راہ گزر سے ہیں گزرنے والے

    ہم گزر آئے ہیں اس راہ گزر سے پہلے

    مجھ سے دیکھے نہیں جاتے ہیں کسی کے آنسو

    پونچھ لو اشک ذرا دیدۂ تر سے پہلے

    حسن والے تو بہت پھرتے ہیں ہر سو لیکن

    تم سا کوئی نہیں گزرا ہے نظر سے پہلے

    ایک منزل ہے مگر راہ کئی ہیں اظہرؔ

    سوچنا یہ ہے کہ جاؤ گے کدھر سے پہلے

    مآخذ
    • کتاب : Shora-e-London (Pg. 23)
    • Author : Jauhar Zahiri
    • مطبع : Books From India (U.K) Ltd. 45, Museum Street,Londan W.C-1 (1985)
    • اشاعت : 1985

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY