دل گیا رونق حیات گئی

جگر مراد آبادی

دل گیا رونق حیات گئی

جگر مراد آبادی

MORE BY جگر مراد آبادی

    INTERESTING FACT

    فلم ''میرے حضور'' میں اداکار راجکمار نے جگر مرادابادی کے اس مطلع کو پڑھا ہے ۔

    دل گیا رونق حیات گئی

    غم گیا ساری کائنات گئی

    دل دھڑکتے ہی پھر گئی وہ نظر

    لب تک آئی نہ تھی کہ بات گئی

    دن کا کیا ذکر تیرہ بختوں میں

    ایک رات آئی ایک رات گئی

    تیری باتوں سے آج تو واعظ

    وہ جو تھی خواہش نجات گئی

    ان کے بہلائے بھی نہ بہلا دل

    رائیگاں سعئ التفات گئی

    مرگ عاشق تو کچھ نہیں لیکن

    اک مسیحا نفس کی بات گئی

    اب جنوں آپ ہے گریباں گیر

    اب وہ رسم تکلفات گئی

    ہم نے بھی وضع غم بدل ڈالی

    جب سے وہ طرز التفات گئی

    ترک الفت بہت بجا ناصح

    لیکن اس تک اگر یہ بات گئی

    ہاں مزے لوٹ لے جوانی کے

    پھر نہ آئے گی یہ جو رات گئی

    ہاں یہ سرشاریاں جوانی کی

    آنکھ جھپکی ہی تھی کہ رات گئی

    جلوۂ ذات اے معاذ اللہ

    تاب آئینۂ صفات گئی

    نہیں ملتا مزاج دل ہم سے

    غالباً دور تک یہ بات گئی

    قید ہستی سے کب نجات جگرؔ

    موت آئی اگر حیات گئی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    رادھکا چوپڑا

    رادھکا چوپڑا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دل گیا رونق حیات گئی نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites