دل کو سمجھاؤ ذرا عشق میں کیا رکھا ہے

لالہ مادھو رام جوہر

دل کو سمجھاؤ ذرا عشق میں کیا رکھا ہے

لالہ مادھو رام جوہر

MORE BYلالہ مادھو رام جوہر

    دل کو سمجھاؤ ذرا عشق میں کیا رکھا ہے

    کس لیے آپ کو دیوانہ بنا رکھا ہے

    یہ تو معلوم ہے بیمار میں کیا رکھا ہے

    تیرے ملنے کی تمنا نے جلا رکھا ہے

    کون سا بادہ کش ایسا ہے کہ جس کی خاطر

    جام پہلے ہی سے ساقی نے اٹھا رکھا ہے

    اپنے ہی حال میں رہنے دے مجھے اے ہم دم

    تیری باتوں نے مرا دھیان بٹا رکھا ہے

    آتش عشق سے اللہ بچائے سب کو

    اسی شعلے نے زمانے کو جلا رکھا ہے

    میں نے زلفوں کو چھوا ہو تو ڈسیں ناگ مجھے

    بے خطا آپ نے الزام لگا رکھا ہے

    کیسے بھولے ہوئے ہیں گبر و مسلماں دونوں

    دیر میں بت ہے نہ کعبے میں خدا رکھا ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab Kalam Lala M.R Jauhar (Pg. 74)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY