دور سایا سا ہے کیا پھولوں میں

باصر سلطان کاظمی

دور سایا سا ہے کیا پھولوں میں

باصر سلطان کاظمی

MORE BYباصر سلطان کاظمی

    دور سایا سا ہے کیا پھولوں میں

    چھپتی پھرتی ہے صبا پھولوں میں

    اتنی خوشبو تھی کہ سر دکھنے لگا

    مجھ سے بیٹھا نہ گیا پھولوں میں

    چاند بھی آ گیا شاخوں کے قریب

    یہ نیا پھول کھلا پھولوں میں

    چاند میرا ہے ستاروں سے الگ

    پھول میرا ہے جدا پھولوں میں

    چاندنی چھوڑ گئی تھی خوشبو

    دھوپ نے رنگ بھرا پھولوں میں

    تتلیاں قمریاں سب اڑ بھی گئیں

    میں تو سویا ہی رہا پھولوں میں

    رک گیا ہاتھ ترا کیوں باصرؔ

    کوئی کانٹا تو نہ تھا پھولوں میں

    مآخذ :
    • کتاب : Urdu Gazal ka Magribi Daricha (Pg. 251)
    • Author : Dr. Jawaz Jafri
    • مطبع : Kitab Saray, Lahore (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY