چاک دامن کو جو دیکھا تو ملا عید کا چاند

ساغر صدیقی

چاک دامن کو جو دیکھا تو ملا عید کا چاند

ساغر صدیقی

MORE BYساغر صدیقی

    چاک دامن کو جو دیکھا تو ملا عید کا چاند

    اپنی تقدیر کہاں بھول گیا عید کا چاند

    ان کے ابروئے خمیدہ کی طرح تیکھا ہے

    اپنی آنکھوں میں بڑی دیر چھپا عید کا چاند

    جانے کیوں آپ کے رخسار مہک اٹھتے ہیں

    جب کبھی کان میں چپکے سے کہا عید کا چاند

    دور ویران بسیرے میں دیا ہو جیسے

    غم کی دیوار سے دیکھا تو لگا عید کا چاند

    لے کے حالات کے صحراؤں میں آ جاتا ہے

    آج بھی خلد کی رنگین فضا عید کا چاند

    تلخیاں بڑھ گئیں جب زیست کے پیمانے میں

    گھول کر درد کے ماروں نے پیا عید کا چاند

    چشم تو وسعت افلاک میں کھوئی ساغرؔ

    دل نے اک اور جگہ ڈھونڈ لیا عید کا چاند

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY