گاہے گاہے بس اب یہی ہو کیا

جون ایلیا

گاہے گاہے بس اب یہی ہو کیا

جون ایلیا

MORE BY جون ایلیا

    گاہے گاہے بس اب یہی ہو کیا

    تم سے مل کر بہت خوشی ہو کیا

    مل رہی ہو بڑے تپاک کے ساتھ

    مجھ کو یکسر بھلا چکی ہو کیا

    یاد ہیں اب بھی اپنے خواب تمہیں

    مجھ سے مل کر اداس بھی ہو کیا

    بس مجھے یوں ہی اک خیال آیا

    سوچتی ہو تو سوچتی ہو کیا

    اب مری کوئی زندگی ہی نہیں

    اب بھی تم میری زندگی ہو کیا

    کیا کہا عشق جاودانی ہے!

    آخری بار مل رہی ہو کیا

    ہاں فضا یاں کی سوئی سوئی سی ہے

    تو بہت تیز روشنی ہو کیا

    میرے سب طنز بے اثر ہی رہے

    تم بہت دور جا چکی ہو کیا

    دل میں اب سوز انتظار نہیں

    شمع امید بجھ گئی ہو کیا

    اس سمندر پہ تشنہ کام ہوں میں

    بان تم اب بھی بہہ رہی ہو کیا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جون ایلیا

    جون ایلیا

    مآخذ:

    • Book : shaayed (Pg. 149)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY