غالباً وقت کی کمی ہے یہاں

کاشف حسین غائر

غالباً وقت کی کمی ہے یہاں

کاشف حسین غائر

MORE BYکاشف حسین غائر

    غالباً وقت کی کمی ہے یہاں

    ورنہ ہر چیز دیدنی ہے یہاں

    سارے رستے ادھر ہی آتے ہیں

    یہ جو آباد اک گلی ہے یہاں

    یہ ہوا یوں ہی خاک چھانتی ہے

    یا کوئی چیز کھو گئی ہے یہاں

    زندگی ہی مرا اثاثہ ہے

    وہ بھی تقسیم ہو رہی ہے یہاں

    کیوں اندھیرا نظر نہیں آتا

    کون سی ایسی روشنی ہے یہاں

    موت کاسہ اٹھائے پھرتی ہے

    اور تہی دست زندگی ہے یہاں

    میرے اندر کا شور ہے مجھ میں

    ورنہ باہر تو خامشی ہے یہاں

    شہر اپنا دکھائی دیتا ہے

    ویسے ہر شخص اجنبی ہے یہاں

    کون سی شے ہے دائمی غائرؔ

    کون سی بات آخری ہے یہاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY