گو قیامت سے پیشتر نہ ہوئی

میلہ رام وفاؔ

گو قیامت سے پیشتر نہ ہوئی

میلہ رام وفاؔ

MORE BYمیلہ رام وفاؔ

    گو قیامت سے پیشتر نہ ہوئی

    تم نہ آئے تو کیا سحر نہ ہوئی

    آ گئی نیند سننے والوں کو

    داستاں غم کی مختصر نہ ہوئی

    خون کتنے ستم کشوں کا ہوا

    آنکھ اس سنگ دل کی تر نہ ہوئی

    اس نے سن کر بھی ان سنی کر دی

    موت بھی میری معتبر نہ ہوئی

    ساتھ تقدیر نے کبھی نہ دیا

    کوئی تدبیر کارگر نہ ہوئی

    چین کی جستجو رہی دن رات

    زندگی چین سے بسر نہ ہوئی

    مجھ کو ملتی نہ اے وفاؔ منزل

    عقل قسمت سے راہ بر نہ ہوئی

    مآخذ
    • کتاب : Sang-e-meel (Pg. 116)
    • Author : mela Ram ‘vfaa’
    • مطبع : Darpan Publications (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY