گمان خاک میں سب کے ملانے والا ہے

خورشید ربانی

گمان خاک میں سب کے ملانے والا ہے

خورشید ربانی

MORE BY خورشید ربانی

    گمان خاک میں سب کے ملانے والا ہے

    کوئی چراغ ہوائیں بجھانے والا ہے

    افق افق پہ مہکتی ہوئی شفق سے کھلا

    کوئی ستارہ کہیں جگمگانے والا ہے

    نہ جانے کون پس چشم ہے جنوں پیشہ

    جو آنسوؤں کے خزانے لٹانے والا ہے

    یہ کون آگ لگانے پہ ہے یہاں مامور

    یہ کون شہر کو مقتل بنانے والا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY