گماں یہی ہے کہ دل خود ادھر کو جاتا ہے

احمد فراز

گماں یہی ہے کہ دل خود ادھر کو جاتا ہے

احمد فراز

MORE BYاحمد فراز

    گماں یہی ہے کہ دل خود ادھر کو جاتا ہے

    سو شک کا فائدہ اس کی نظر کو جاتا ہے

    حدیں وفا کی بھی آخر ہوس سے ملتی ہیں

    یہ راستہ بھی ادھر سے ادھر کو جاتا ہے

    یہ دل کا درد تو عمروں کا روگ ہے پیارے

    سو جائے بھی تو پہر دو پہر کو جاتا ہے

    یہ حال ہے کہ کئی راستے ہیں پیش نظر

    مگر خیال تری رہگزر کو جاتا ہے

    تو انوریؔ ہے نہ غالبؔ تو پھر یہ کیوں ہے فرازؔ

    ہر ایک سیل بلا تیرے گھر کو جاتا ہے

    RECITATIONS

    خالد مبشر

    خالد مبشر

    خالد مبشر

    گماں یہی ہے کہ دل خود ادھر کو جاتا ہے خالد مبشر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY