حال مرگ بے کسی سن کر اثر کوئی نہ ہو

حسن بریلوی

حال مرگ بے کسی سن کر اثر کوئی نہ ہو

حسن بریلوی

MORE BYحسن بریلوی

    حال مرگ بے کسی سن کر اثر کوئی نہ ہو

    سچ تو یہ ہے آپ سا بھی بے خبر کوئی نہ ہو

    ہائے دشمن دیکھیں ان کے اٹھتے جوبن کی بہار

    ہائے میں کوئی نہ ہوں میری نظر کوئی نہ ہو

    اس تمنا پر کٹے مرتے ہیں مشتاقان قتل

    یار پر قربان ہم سے پیشتر کوئی نہ ہو

    وہ قیامت کی گھڑی ہے طالب دیدار پر

    جب اٹھے پردا تو پردے کے ادھر کوئی نہ ہو

    عشق میں بے تابیاں ہوتی ہیں لیکن اے حسنؔ

    جس قدر بے چین تم ہو اس قدر کوئی نہ ہو

    مآخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 133)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY