حال اس کا ترے چہرہ پہ لکھا لگتا ہے

شہزاد احمد

حال اس کا ترے چہرہ پہ لکھا لگتا ہے

شہزاد احمد

MORE BYشہزاد احمد

    حال اس کا ترے چہرہ پہ لکھا لگتا ہے

    وہ جو چپ چاپ کھڑا ہے ترا کیا لگتا ہے

    یوں تری یاد میں دن رات مگن رہتا ہوں

    دل دھڑکنا ترے قدموں کی صدا لگتا ہے

    یوں تو ہر چیز سلامت ہے مری دنیا میں

    اک تعلق ہے کہ جو ٹوٹا ہوا لگتا ہے

    اے مرے جذب دروں مجھ میں کشش ہے اتنی

    جو خطا ہوتا ہے وہ تیر بھی آ لگتا ہے

    جانے میں کون سی پستی میں گرا ہوں شہزادؔ

    اس قدر دور ہے سورج کہ دیا لگتا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY