نظر جو کوئی بھی تجھ سا حسیں نہیں آتا

شہریار

نظر جو کوئی بھی تجھ سا حسیں نہیں آتا

شہریار

MORE BYشہریار

    نظر جو کوئی بھی تجھ سا حسیں نہیں آتا

    کسی کو کیا مجھے خود بھی یقیں نہیں آتا

    ترا خیال بھی تیری طرح ستم گر ہے

    جہاں پہ چاہئے آنا وہیں نہیں آتا

    جو ہونے والا ہے اب اس کی فکر کیا کیجے

    جو ہو چکا ہے اسی پر یقیں نہیں آتا

    یہ میرا دل ہے کہ منظر اجاڑ بستی کا

    کھلے ہوئے ہیں سبھی در مکیں نہیں آتا

    بچھڑنا ہے تو بچھڑ جا اسی دوراہے پر

    کہ موڑ آگے سفر میں کہیں نہیں آتا

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے