وہی تاج ہے وہی تخت ہے وہی زہر ہے وہی جام ہے

بشیر بدر

وہی تاج ہے وہی تخت ہے وہی زہر ہے وہی جام ہے

بشیر بدر

MORE BYبشیر بدر

    وہی تاج ہے وہی تخت ہے وہی زہر ہے وہی جام ہے

    یہ وہی خدا کی زمین ہے یہ وہی بتوں کا نظام ہے

    بڑے شوق سے مرا گھر جلا کوئی آنچ تجھ پہ نہ آئے گی

    یہ زباں کسی نے خرید لی یہ قلم کسی کا غلام ہے

    یہاں ایک بچے کے خون سے جو لکھا ہوا ہے اسے پڑھیں

    ترا کیرتن ابھی پاپ ہے ابھی میرا سجدہ حرام ہے

    میں یہ مانتا ہوں مرے دئیے تری آندھیوں نے بجھا دئیے

    مگر ایک جگنو ہواؤں میں ابھی روشنی کا امام ہے

    مرے فکر و فن تری انجمن نہ عروج تھا نہ زوال ہے

    مرے لب پہ تیرا ہی نام تھا مرے لب پہ تیرا ہی نام ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے