ہمارا دل سویرے کا سنہرا جام ہو جائے

بشیر بدر

ہمارا دل سویرے کا سنہرا جام ہو جائے

بشیر بدر

MORE BY بشیر بدر

    ہمارا دل سویرے کا سنہرا جام ہو جائے

    چراغوں کی طرح آنکھیں جلیں جب شام ہو جائے

    کبھی تو آسماں سے چاند اترے جام ہو جائے

    تمہارے نام کی اک خوبصورت شام ہو جائے

    عجب حالات تھے یوں دل کا سودا ہو گیا آخر

    محبت کی حویلی جس طرح نیلام ہو جائے

    سمندر کے سفر میں اس طرح آواز دے ہم کو

    ہوائیں تیز ہوں اور کشتیوں میں شام ہو جائے

    مجھے معلوم ہے اس کا ٹھکانا پھر کہاں ہوگا

    پرندہ آسماں چھونے میں جب ناکام ہو جائے

    اجالے اپنی یادوں کے ہمارے ساتھ رہنے دو

    نہ جانے کس گلی میں زندگی کی شام ہو جائے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    ہمارا دل سویرے کا سنہرا جام ہو جائے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites