ہر کوئی دل کی ہتھیلی پہ ہے صحرا رکھے

احمد فراز

ہر کوئی دل کی ہتھیلی پہ ہے صحرا رکھے

احمد فراز

MORE BYاحمد فراز

    ہر کوئی دل کی ہتھیلی پہ ہے صحرا رکھے

    کس کو سیراب کرے وہ کسے پیاسا رکھے

    عمر بھر کون نبھاتا ہے تعلق اتنا

    اے مری جان کے دشمن تجھے اللہ رکھے

    ہم کو اچھا نہیں لگتا کوئی ہم نام ترا

    کوئی تجھ سا ہو تو پھر نام بھی تجھ سا رکھے

    دل بھی پاگل ہے کہ اس شخص سے وابستہ ہے

    جو کسی اور کا ہونے دے نہ اپنا رکھے

    کم نہیں طمع عبادت بھی تو حرص زر سے

    فقر تو وہ ہے کہ جو دین نہ دنیا رکھے

    ہنس نہ اتنا بھی فقیروں کے اکیلے پن پر

    جا خدا میری طرح تجھ کو بھی تنہا رکھے

    یہ قناعت ہے اطاعت ہے کہ چاہت ہے فرازؔ

    ہم تو راضی ہیں وہ جس حال میں جیسا رکھے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    احمد فراز

    احمد فراز

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    ہر کوئی دل کی ہتھیلی پہ ہے صحرا رکھے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY