ہوائے دور مے خوش گوار راہ میں ہے

حیدر علی آتش

ہوائے دور مے خوش گوار راہ میں ہے

حیدر علی آتش

MORE BYحیدر علی آتش

    ہوائے دور مے خوش گوار راہ میں ہے

    خزاں چمن سے ہے جاتی بہار راہ میں ہے

    گدا نواز کوئی شہسوار راہ میں ہے

    بلند آج نہایت غبار راہ میں ہے

    عدم کے کوچ کی لازم ہے فکر ہستی میں

    نہ کوئی شہر نہ کوئی دیار راہ میں ہے

    نہ بدرقہ ہے نہ کوئی رفیق ساتھ اپنے

    فقط عنایت پروردگار راہ میں ہے

    سفر ہے شرط مسافر نواز بہتیرے

    ہزار ہا شجر سایہ دار راہ میں ہے

    مقام تک بھی ہم اپنے پہنچ ہی جائیں گے

    خدا تو دوست ہے دشمن ہزار راہ میں ہے

    تھکیں جو پاؤں تو چل سر کے بل نہ ٹھہر آتشؔ

    گل مراد ہے منزل میں خار راہ میں ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Zarrin Urdu Ghazal (Pg. 105)
    • Author : Khvaja Mohammad Zakriya
    • مطبع : Sangat Publishers (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY