ہزار شمع فروزاں ہو روشنی کے لیے

نشور واحدی

ہزار شمع فروزاں ہو روشنی کے لیے

نشور واحدی

MORE BY نشور واحدی

    ہزار شمع فروزاں ہو روشنی کے لیے

    نظر نہیں تو اندھیرا ہے آدمی کے لیے

    تعلقات کی دنیا بھی آدمی کے لیے

    اک اجنبی سا تصور ہے اجنبی کے لیے

    چمن چمن ہے محبت جہاں جہاں سے جمال

    یہ اہتمام ہے اک دل کی زندگی کے لیے

    شب نشاط مبارک تجھے یہ ماہ و نجوم

    سحر بہت ہے مری کم ستارگی کے لیے

    نگاہ دوست سلامت کہ فیض گریہ سے

    بہت گہر ہیں مرے دامن تہی کے لیے

    نگاہ مست کی صہبا ٹپک رہی ہے نشورؔ

    غزل کہی ہے طبیعت کی سر خوشی کے لیے

    ذریعہ:

    • Book: Sawad-e-manzil (Pg. 187)
    • Author: Nushoor Wahedi
    • مطبع: Maktaba Jamia Ltd, Delhi (2009)
    • اشاعت: 2009
    0
    COMMENT
    COMMENTS
    تبصرے دیکھیے

    Critique mode ON

    Tap on any word to submit a critique about that line. Word-meanings will not be available while you’re in this mode.

    OKAY

    SUBMIT CRITIQUE

    نام

    ای-میل

    تبصره

    Thanks, for your feedback

    Critique draft saved

    EDIT DISCARD

    CRITIQUE MODE ON

    TURN OFF

    Discard saved critique?

    CANCEL DISCARD

    CRITIQUE MODE ON - Click on a line of text to critique

    TURN OFF

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites