ہو خدا کا کرم ارادوں پر

ہیرا لال فلک دہلوی

ہو خدا کا کرم ارادوں پر

ہیرا لال فلک دہلوی

MORE BYہیرا لال فلک دہلوی

    ہو خدا کا کرم ارادوں پر

    جی رہے ہیں کسی کے وعدوں پر

    زندگی کو بنا دیا ہے چمن

    پھول برسیں تمہاری یادوں پر

    اصلیت کیا ہے یہ خدا جانے

    زندہ اب تک ہیں اعتقادوں پر

    پاس آ کر گریز کرتے ہو

    ظلم ہے یہ مری مرادوں پر

    چھن گئے تخت بادشاہوں کے

    تنگ دنیا ہے شاہ زادوں پر

    مل کے سب امن و چین سے رہئے

    لعنتیں بھیجئے فسادوں پر

    اے فلکؔ ناز ہے فقیری میں

    مجھ کو بوسیدہ ان لبادوں پر

    مآخذ
    • کتاب : Harf-o-sada (Pg. 77)
    • Author : Hira lal Falak Dehlvi
    • مطبع : Hira lal Falak Dehlvi (1982)
    • اشاعت : 1982

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY