اک لمحہ بھی گزاروں بھلا کیوں کسی کے ساتھ

بشیر مہتاب

اک لمحہ بھی گزاروں بھلا کیوں کسی کے ساتھ

بشیر مہتاب

MORE BYبشیر مہتاب

    اک لمحہ بھی گزاروں بھلا کیوں کسی کے ساتھ

    گزرے تمام عمر مری آپ ہی کے ساتھ

    جب ہاتھ دوستی کا بڑھایا خوشی کے ساتھ

    اس نے مجھے قبول کیا خوش دلی کے ساتھ

    دل سے کیا ہے یاد اسے میں نے جب کبھی

    اظہار ہجر کرتی ہیں آنکھیں نمی کے ساتھ

    اک بار میرے یار نے ایسا کیا مذاق

    اللہ رے نہ ہو کبھی ایسا کسی کے ساتھ

    اس طرح منسلک ہوا اردو زبان سے

    ملتا ہوں اب سبھی سے بڑی عاجزی کے ساتھ

    باقی رہی ہے دل میں یہ حسرت تمام عمر

    مہتابؔ کا دیار ہو اس کی گلی کے ساتھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY