اک تری یاد کے سہارے پر

خالد ملک ساحل

اک تری یاد کے سہارے پر

خالد ملک ساحل

MORE BY خالد ملک ساحل

    اک تری یاد کے سہارے پر

    زندگی کٹ گئی کنارے پر

    کون رستے بدل رہا ہے وہاں

    کون رہتا ہے اس ستارے پر

    روشنی کی اگر علامت ہے

    راکھ اڑتی ہے کیوں شرارے پر

    امتحاں کی خبر نہیں لیکن

    رو رہا ہوں ابھی خسارے پر

    جب نظر کو نظر نہیں آیا

    زندگی رک گئی نظارے پر

    میرے اصرار پر نہیں آیا

    جس کو اصرار تھا اشارے پر

    خود نمائی کا جال تھا ساحلؔ

    میں نے بھی فکر کے سنوارے پر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY