اس راستے میں جب کوئی سایہ نہ پائے گا

اظہر عنایتی

اس راستے میں جب کوئی سایہ نہ پائے گا

اظہر عنایتی

MORE BYاظہر عنایتی

    اس راستے میں جب کوئی سایہ نہ پائے گا

    یہ آخری درخت بہت یاد آئے گا

    بچھڑے ہوؤں کی یاد تو آئے گی جیتے جی

    موسم رفاقتوں کا پلٹ کر نہ آئے گا

    تخلیق اور شکست کا دیکھیں گے لوگ فن

    دریا حباب سطح پہ جب تک بنائے گا

    ہر ہر قدم پہ آئنہ بردار ہے نظر

    بے چہرگی کو کوئی کہاں تک چھپائے گا

    میری صدا کا قد ہے فضا سے بھی کچھ بلند

    ظالم فصیل شہر کہاں تک اٹھائے گا

    تعریف کر رہا ہے ابھی تک جو آدمی

    اٹھا تو میرے عیب ہزاروں گنائے گا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    اظہر عنایتی

    اظہر عنایتی

    مأخذ :
    • کتاب : jhunka na-e-mausam kaa (Pg. 107)
    • Author : azhar inaayatii
    • مطبع : islamic wonders bureau (2006)
    • اشاعت : 2006

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY