جب بھی وہ مجھ سے ملا رونے لگا

ظفر حمیدی

جب بھی وہ مجھ سے ملا رونے لگا

ظفر حمیدی

MORE BY ظفر حمیدی

    جب بھی وہ مجھ سے ملا رونے لگا

    اور جب تنہا ہوا رونے لگا

    دوستوں نے ہنس کے جب بھی بات کی

    وہ ہنسا پھر چپ رہا رونے لگا

    جب بھی میرے پاؤں میں کانٹا چبھا

    پتہ پتہ باغ کا رونے لگا

    آبیاری کے لیے آیا تھا کون

    ہر شجر مرجھا گیا رونے لگا

    چاند نکلا جب محرم کا کہیں

    چپ سے دشت کربلا رونے لگا

    اس پہ کیا بیتی ہے اپنے شہر میں

    آشنا ناآشنا رونے لگا

    میرے دشمن کا رویہ تھا عجب

    جب ہوا مجھ سے جدا رونے لگا

    بادلوں نے آج برسایا لہو

    امن کا ہر فاختہ رونے لگا

    دیکھ کر مسجد میں مجھ کو مضطرب

    میرے غم میں بت کدہ رونے لگا

    تھا ظفرؔ کا اک انوکھا ماجرا

    غور سے جس نے سنا رونے لگا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    جب بھی وہ مجھ سے ملا رونے لگا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY