جب میں اس کے گاؤں سے باہر نکلا تھا

اسلم کولسری

جب میں اس کے گاؤں سے باہر نکلا تھا

اسلم کولسری

MORE BYاسلم کولسری

    جب میں اس کے گاؤں سے باہر نکلا تھا

    ہر رستے نے میرا رستہ روکا تھا

    مجھ کو یاد ہے جب اس گھر میں آگ لگی

    اوپر سے بادل کا ٹکڑا گزرا تھا

    شام ہوئی اور سورج نے اک ہچکی لی

    بس پھر کیا تھا کوسوں تک سناٹا تھا

    میں نے اپنے سارے آنسو بخش دیے

    بچے نے تو ایک ہی پیسہ مانگا تھا

    شہر میں آ کر پڑھنے والے بھول گئے

    کس کی ماں نے کتنا زیور بیچا تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY