جس کا انکار بھی انکار نہ سمجھا جائے

سلیم احمد

جس کا انکار بھی انکار نہ سمجھا جائے

سلیم احمد

MORE BY سلیم احمد

    جس کا انکار بھی انکار نہ سمجھا جائے

    ہم سے وہ یار طرح دار نہ سمجھا جائے

    اتنی کاوش بھی نہ کر میری اسیری کے لیے

    تو کہیں میرا گرفتار نہ سمجھا جائے

    اب جو ٹھہری ہے ملاقات تو اس شرط کے ساتھ

    شوق کو در خور اظہار نہ سمجھا جائے

    نالہ بلبل کا جو سنتا ہے تو کھل اٹھتا ہے گل

    عشق کو مفت کی بیگار نہ سمجھا جائے

    عشق کو شاد کرے غم کا مقدر بدلے

    حسن کو اتنا بھی مختار نہ سمجھا جائے

    بڑھ چلا آج بہت حد سے جنون گستاخ

    اب کہیں اس سے سر دار نہ سمجھا جائے

    دل کے لینے سے سلیمؔ اس کو نہیں ہے انکار

    لیکن اس طرح کہ اقرار نہ سمجھا جائے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY