جو تصور سے ماورا نہ ہوا

اقبال سہیل

جو تصور سے ماورا نہ ہوا

اقبال سہیل

MORE BYاقبال سہیل

    جو تصور سے ماورا نہ ہوا

    وہ تو بندہ ہوا خدا نہ ہوا

    دل اگر درد آشنا نہ ہوا

    ننگ ہستی ہوا ہوا نہ ہوا

    رتبہ داں تھا جبین عشق کا میں

    حسن کے در پہ جبہہ سا نہ ہوا

    دل خطاوار اشتیاق سہی

    لب گنہ گار التجا نہ ہوا

    ننگ ہے بے عمل قبول بہشت

    یہ تو صدقہ ہوا صلا نہ ہوا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    جو تصور سے ماورا نہ ہوا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY