آنکھوں میں چبھ گئیں تری یادوں کی کرچیاں (ردیف .. ے)

وصی شاہ

آنکھوں میں چبھ گئیں تری یادوں کی کرچیاں (ردیف .. ے)

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    آنکھوں میں چبھ گئیں تری یادوں کی کرچیاں

    کاندھوں پہ غم کی شال ہے اور چاند رات ہے

    دل توڑ کے خموش نظاروں کا کیا ملا

    شبنم کا یہ سوال ہے اور چاند رات ہے

    کیمپس کی نہر پر ہے ترا ہاتھ ہاتھ میں

    موسم بھی لا زوال ہے اور چاند رات ہے

    ہر اک کلی نے اوڑھ لیا ماتمی لباس

    ہر پھول پر ملال ہے اور چاند رات ہے

    چھلکا سا پڑ رہا ہے وصیؔ وحشتوں کا رنگ

    ہر چیز پہ زوال ہے اور چاند رات ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY