کہو تو نام میں دے دوں اسے محبت کا

فاطمہ حسن

کہو تو نام میں دے دوں اسے محبت کا

فاطمہ حسن

MORE BYفاطمہ حسن

    کہو تو نام میں دے دوں اسے محبت کا

    جو اک الاؤ ہے جلتی ہوئی رفاقت کا

    جسے بھی دیکھو چلا جا رہا ہے تیزی سے

    اگرچہ کام یہاں کچھ نہیں ہے عجلت کا

    دکھائی دیتا ہے جو کچھ کہیں وہ خواب نہ ہو

    جو سن رہی ہوں وہ دھوکا نہ ہو سماعت کا

    یقین کرنے لگے لوگ رت بدلتی ہے

    مگر یہ سچ بھی کرشمہ نہ ہو خطابت کا

    سنوارتی رہی گھر کو مگر یہ بھول گئی

    کہ مختصر ہے یہ عرصہ یہاں سکونت کا

    چلو کہ اس میں بھی اک آدھ کام کر ڈالیں

    جو مل گیا ہے یہ لمحہ ذرا سی مہلت کا

    مآخذ:

    • کتاب : Ghazal Calendar-2015 (Pg. 05.10.2015)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY