کمال ضبط کو خود بھی تو آزماؤں گی

پروین شاکر

کمال ضبط کو خود بھی تو آزماؤں گی

پروین شاکر

MORE BYپروین شاکر

    کمال ضبط کو خود بھی تو آزماؤں گی

    میں اپنے ہاتھ سے اس کی دلہن سجاؤں گی

    سپرد کر کے اسے چاندنی کے ہاتھوں میں

    میں اپنے گھر کے اندھیروں کو لوٹ آؤں گی

    بدن کے کرب کو وہ بھی سمجھ نہ پائے گا

    میں دل میں روؤں گی آنکھوں میں مسکراؤں گی

    وہ کیا گیا کہ رفاقت کے سارے لطف گئے

    میں کس سے روٹھ سکوں گی کسے مناؤں گی

    اب اس کا فن تو کسی اور سے ہوا منسوب

    میں کس کی نظم اکیلے میں گنگناؤں گی

    وہ ایک رشتۂ بے نام بھی نہیں لیکن

    میں اب بھی اس کے اشاروں پہ سر جھکاؤں گی

    بچھا دیا تھا گلابوں کے ساتھ اپنا وجود

    وہ سو کے اٹھے تو خوابوں کی راکھ اٹھاؤں گی

    سماعتوں میں گھنے جنگلوں کی سانسیں ہیں

    میں اب کبھی تری آواز سن نہ پاؤں گی

    جواز ڈھونڈ رہا تھا نئی محبت کا

    وہ کہہ رہا تھا کہ میں اس کو بھول جاؤں گی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    RECITATIONS

    فہد حسین

    فہد حسین

    فہد حسین

    PARVEEN SHAKIR - KAMAAL E ZABT KO KHUD BHI فہد حسین

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY