خاموشی بحران صدا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

پرویز شاہدی

خاموشی بحران صدا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

پرویز شاہدی

MORE BYپرویز شاہدی

    خاموشی بحران صدا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    سناٹا تک چیخ رہا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    ترک تعلق کر کے زباں سے دل کا جینا مشکل ہے

    یہ کیسا آہنگ وفا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    دل والوں کی خاموشی ہی بار سماعت ہوتی ہے

    بے آوازی کرب فضا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    بھیس بدلتی آوازیں ہی شام و سحر کہلاتی ہے

    وقت کا دم کیا ٹوٹ گیا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    سکتے تک اب آ پہنچا ہے بڑھتے بڑھتے کرب سکوت

    ہونٹوں پر کیا وقت پڑا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    کیسی نرمی کیسی سختی لہجے کی کیا بات کریں

    فکر ہی اب غم کردہ صدا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    جب تک راہ وفا تھی سیدھی زور بیاں تھا عیش سفر

    شاید کوئی موڑ آیا ہے تم بھی چپ ہو ہم بھی چپ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY