خواب میں رات ہم نے کیا دیکھا

ناصر کاظمی

خواب میں رات ہم نے کیا دیکھا

ناصر کاظمی

MORE BYناصر کاظمی

    خواب میں رات ہم نے کیا دیکھا

    آنکھ کھلتے ہی چاند سا دیکھا

    کیاریاں دھول سے اٹی پائیں

    آشیانہ جلا ہوا دیکھا

    فاختہ سرنگوں ببولوں میں

    پھول کو پھول سے جدا دیکھا

    اس نے منزل پہ لا کے چھوڑ دیا

    عمر بھر جس کا راستا دیکھا

    ہم نے موتی سمجھ کے چوم لیا

    سنگ ریزہ جہاں پڑا دیکھا

    کم نما ہم بھی ہیں مگر پیارے

    کوئی تجھ سا نہ خود نما دیکھا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    خواب میں رات ہم نے کیا دیکھا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY