کسی دن زندگانی میں کرشمہ کیوں نہیں ہوتا

راجیش ریڈی

کسی دن زندگانی میں کرشمہ کیوں نہیں ہوتا

راجیش ریڈی

MORE BYراجیش ریڈی

    کسی دن زندگانی میں کرشمہ کیوں نہیں ہوتا

    میں ہر دن جاگ تو جاتا ہوں زندہ کیوں نہیں ہوتا

    مری اک زندگی کے کتنے حصے دار ہیں لیکن

    کسی کی زندگی میں میرا حصہ کیوں نہیں ہوتا

    جہاں میں یوں تو ہونے کو بہت کچھ ہوتا رہتا ہے

    میں جیسا سوچتا ہوں کچھ بھی ویسا کیوں نہیں ہوتا

    ہمیشہ طنز کرتے ہیں طبیعت پوچھنے والے

    تم اچھا کیوں نہیں کرتے میں اچھا کیوں نہیں ہوتا

    زمانے بھر کے لوگوں کو کیا ہے مبتلا تو نے

    جو تیرا ہو گیا تو بھی اسی کا کیوں نہیں ہوتا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    راجیش ریڈی

    راجیش ریڈی

    RECITATIONS

    راجیش ریڈی

    راجیش ریڈی

    راجیش ریڈی

    کسی دن زندگانی میں کرشمہ کیوں نہیں ہوتا راجیش ریڈی

    مأخذ :
    • کتاب : Vajood (Pg. 3)
    • Author : Rajesh Reddy
    • مطبع : Vishal Publications (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY