کیا ہے پیار جسے ہم نے زندگی کی طرح

قتیل شفائی

کیا ہے پیار جسے ہم نے زندگی کی طرح

قتیل شفائی

MORE BYقتیل شفائی

    کیا ہے پیار جسے ہم نے زندگی کی طرح

    وہ آشنا بھی ملا ہم سے اجنبی کی طرح

    کسے خبر تھی بڑھے گی کچھ اور تاریکی

    چھپے گا وہ کسی بدلی میں چاندنی کی طرح

    بڑھا کے پیاس مری اس نے ہاتھ چھوڑ دیا

    وہ کر رہا تھا مروت بھی دل لگی کی طرح

    ستم تو یہ ہے کہ وہ بھی نہ بن سکا اپنا

    قبول ہم نے کیے جس کے غم خوشی کی طرح

    کبھی نہ سوچا تھا ہم نے قتیلؔ اس کے لیے

    کرے گا ہم پہ ستم وہ بھی ہر کسی کی طرح

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    غلام علی

    غلام علی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY